476

پاکستان کا سیاسی نظام اور گجر قوم ۔۔تحریر۔۔ماہا سیف گجر

پاکستان کا سیاسی نظام اور گجر قوم
تحریر :٠ ماہا سیف گجر

پاکستان میں جمہوری نظام رائج ہے اور جمہوری نظام میں سیاست دان ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں ۔ گجر قوم کی بہتری اور ترقی کے لیے ضروری ہے کہ گجر قوم کے بااثر لوگ اس وقت پاکستان کے سیاسی نظام میں اپنے آپ کو پیش کریں تاکہ کامیاب ہو کر گجر قوم کی نمائندگی کے ساتھ ساتھ گجروں کے حقوق کے لیے ہر جگہ ان کے ساتھ موجود رہیں ۔ ایک ہی حلقہ میں آپس میں مقابلہ کرنے کے بجائے گجر قوم کے لیے متفقہ امیدوار سامنے لے کر آئیں اور پھر اسے کامیاب کروا کر ایک قوم ہونے کا ثبوت دیں ۔ سیاست بری چیز نہیں ہے لیکن آپس میں تقسیم اور مقابلہ کرنا بھی ہرگز ٹھیک عمل نہ ہے جس کی وجہ سے گجر قوم کو نقصان اٹھانا پڑتا ہے اور فائدے دوسرے لوگ لے جاتے ہیں ۔ پاکستان میں اگر کامیاب ہونا ہے تو ہمیں سسٹم کے ساتھ چلنا پڑے گا ۔ اگر گجر قوم سیاست میں نا آئے گی تو کبھی بھی پاکستان کے آئینی پلیٹ فارم کا حصہ نا بن سکے گی ۔ آج کل تو حلقے میں ترقیاتی کام ، سرکاری ملازمتیں ، معاشی تحفظ یہ سب کام اب سیاست کے ذریعے ہی ممکن ہے ۔ سیاسی نمائندگی نا ہونے کی وجہ سے سوات (بڈئی) واقعہ پر منصفانہ کاروائی نہ ہو سکی اور سست روی کا شکار ہے ۔ ایسے ہی کشمیر اور گلگت واقعات میں بھی خاطر خواہ نمائندگی نا ہونے کی وجہ سے مشکلات کا سامنا رہا ۔ رہی سہی کسر باہمی روابط میں کمی کے باعث اور کسی بھی احتجاج کے لئے کوئی ٹیم نا ہونے کی وجہ سے کسی بھی شہر میں کوئی مظاہرہ نا ہو سکا ۔ کہنے کو تو کم و بیش چھ کروڑ نفوس پاکستان میں گجر قوم کے ہیں مگر صد افسوس کے اپنی قوم پر ہونے والے مظالم کے خلاف کسی شہر میں چھ لوگ بھی اکٹھے نا ہو سکے ۔ اب بھی وقت ہے سب کو منظم ہو کر آگے بڑھنا ہو گا ۔ آجکل کے جدید سوشل میڈیا کے دور میں سب کو یکجا ہو کر گجر قوم کے لیے متحد ہونا پڑے گا نہیں تو آنے والی نسلیں اور ہم اس معاشرے میں پس کر رہ جائیں گے ۔ سیاست کا ذکر ہو تو چوہدری قمر زمان کائرہ کا ذکر نا ہو ایسے ہی سردار یوسف ، آفتاب شیرپاؤ ، والیِ سوات شہزادہ شہریار ، حاجی جلات خان ، سید اکبر ، محمد ابراہیم گجر
اور دیگر پنجاب اسمبلی ، کشمیر حکومت ، سندھ ، گلگت ، بلوچستان ، کے ـ پی ۔ کے گجر سیاست دان گجر قوم کا فخر اور ماتھے کا جھومر ہیں ۔۔۔ کچھ لوگوں کا تعلق مختلف سیاسی جماعتوں سے ہوتا ہے اور من پسند جماعت کا انتخاب ہونا بھی چاہیے لیکن مدِ مقابل نہیں آنا چاہیے ۔ چند دن قبل سوات میں ہونے والا گجر قوم کا پاور شو انتہائی اہمیت رکھتا ہے ایسے ہی گلگت میں بھی الیکشن کی گہما گہمی میں سیاسی قائدین کو اپنا پاور شو دکھانا ہو گا ۔ جو لوگ یہ سوچ رکھتے ہیں کہ گجر قوم کے لیڈر سیاست نا کریں وہ شاید پاکستان کے آئینی نظام کے متعلق باخبر نہیں ہیں ۔ وطنِ پاکستان کا نظام اور ترقی و تعمیر سیاست دان ہی کر رہے ہیں ۔ ضرورتِ وقت ہے کہ گجر قوم کے مستقبل کے لیے پورے پاکستان سے گجر متحد ہو کر آگے بڑھیں ۔ گجر قوم میں تعلیم کے حصول کے لیے بہترین کاوشیں کریں اور سیاسی نمائندگی کا حق ادا کریں ۔ حقیقتِ وقت یہی ہے کہ جیسے گجر قوم کاروبار ، زمینداری ، افواج ِ پاکستان ، اعوان بالا ـ زریں ، صحافتی اداروں ، قانون نافذ کرنے والوں ، تعلیمی اداروں ، بیوروکریسی ، وکالت کے شعبے ، ججز ، ٹرانسپوٹرز دانشوروں میں نمایاں ہیں ایسے ہی اب سیاسی میدان میں بھی بھرپور شرکت ضروری ہے ۔ پنجاب اور آزاد کشمیر کے لوگ اس میدان میں بہت آگے ہیں ۔ ایسے ہی کے پی کے ، گلگت ، بلوچستان اور سندھ میں نمائندوں کو پہلی صف میں آنا ہو گا ۔ پنجاب ، کشمیر اور وفاق کے قائدین کو چاہیے کہ سوات اور گلگت میں گجر قوم کے سیاست دانوں کو مضبوط کرنے میں اپنا کردار ادا کریں ۔۔۔
اللہ پاک ہم سب کا حامی و ناصر ہو ۔۔۔ آمین

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

2 تبصرے “پاکستان کا سیاسی نظام اور گجر قوم ۔۔تحریر۔۔ماہا سیف گجر

  1. Sb se bara masla siasat me entry nai hy balky main problem sb gujjar brothers ka 1 platform pr aktha hona hy jb ye kam razamandi se ho gya us din Gujjaro ka name ho ga but you point out this and put your opinion in front of us May Allah give succes to your thoughts

اپنا تبصرہ بھیجیں