413

قوم کے سپوت۔۔تحریر۔۔ماہا سیف گجر

قوم کے سپوت

تحریر ماہا سیف گجر

اپنے لیے تو سبھی جیتے ہیں لیکن اصل زندگی خدمتِ خلق میں پوشیدہ ہے ۔  قُربِ الہٰی بھی اُس کی مخلوق سے محبت میں ہے ۔ نفسا نفسی کے اس دور میں زیادہ تر لوگ اپنے کاروبار جما کر یا اچھی نوکری حاصل کر کے اپنی دنیا میں مگن ہو جاتے ہیں لیکن کچھ لوگ یہ سب حاصل کرنے کے باوجود  بھی اپنا آپ اپنی قوم کے لیے قربان کر دیتے ہیں ۔ ایسے ہی فرشتہ صفت انسانوں کی وجہ سے معاشرے میں توازن برقرار ہے ورنہ تو سرمایہ دار اور سیٹلڈ لوگ عام انسان کے حقوق بھی کھا جائیں ۔ گو کہ خدمتِ خلق  ایک مشکل  راستہ ہے لیکن اس راہ پر چلنے کے لیے اللہ تعالیٰ ہمیشہ اپنے محبوب بندوں کو چنتا ہے ۔ گجر قوم کے لیے بابا جی چوہدری عبدالحمید صاحب

کی مثال یہاں قابلِ ذکر ہے جنہوں نے اپنی سرکاری نوکری اور دنیاوی سہولیات کے ہوتے ہوئے سوات اور لاہور میں بیش بہا خدمات انجام دی  ہیں وہیں سپوتِ ہزارہ کی خدمات بھی قابلِ ذکر ہیں جنہوں نے سب دنیاوی سہولیات میسر ہونے اور اعلیٰ عسکری ادارے میں خدمات انجام دینے کے باوجود غریب اور بے سہارا عوام کے لیے بے انتہاء محنت کی اور ایک بے مثال ادارے عوام ہمدرد فاؤنڈیشن کے ذریعے عوام کے لئے بے پناہ کام کیے ۔ سردار محمد الیاس کسی بھی تعارف کے محتاج نہیں ۔

زیادہ تر عسکری اداروں سے وابستہ لوگ یا تو سیاست کرتے ہیں یا باقی زندگی آرام لیکن سردار الیاس کی اپنی قوم سے محبت اور  خدمت کے جذبے کے تحت  انہوں نے خدمتِ خلق کے مشن کو سنبھالا ۔ کرنل (ر) سردار محمد الیاس  سچے پاکستانی اور عاشقِ  رسول صلی اللہ علیہ وسلم  ہیں ۔ ان کی شخصیت جب بھی مخاطب ہوئی نوجوانوں کو تعلیم کے حصول کے لیے زور دیتی رہی ۔ انہیں باخوبی علم ہے کہ کسی بھی قوم کی تعمیر و ترقی میں تعلیم ہی بنیادی کردار ادا کرسکتی ہے ۔ سردار محمد الیاس کا کچھ دن قبل کیا جانے والا سوات کا دورہ خوش آئند ہے ۔ جس سے نوجوانوں کو بلخصوص رہنمائی ملی بلکہ آگے بڑھنے اور تعلیم حاصل کرنے کا شوق اجاگر ہوا ۔ سردار محمد الیاس گجر قوم کا قیمتی سرمایہ  ہیں ۔ ہزارہ کے علاوہ سوات ، گلگت ، کوہستان اور دیگر علاقوں کے طالب علموں اور قوم میں شعور بیدار کرنے کے لئے گجر قوم  کو آپ کی ضرورت ہے ۔ سوات میں سردارِ قوم سردار رضا  خان

ڈاکٹر شفیق چیچی

حاجی جلات خان

دیگر مشران اور گجر قوم سوات کی تعلیم صحت اور دیگر فلاحی کاموں میں خدمات کسی سے ڈھکی چھپی نہیں ہیں اس وقت سردار محمد الیاس خان ، سردارِ قوم سردار رضا خان اور دیگر مشران اس جزبہ اور سوچ کے ساتھ نہ صرف سوات ، ہزارہ بلکہ گلگت بلتستان ، کشمیر اور دیگر پاکستان کے علاقوں میں بھی گجر قوم  کو آگے لا سکتے ہیں  گجر قوم وفا کی پیکر ہے  اپنے محسنوں کو کبھی فراموش نہیں کرتی ۔ سردار محمد الیاس اور عبدالحمید (بابا جی) کو ہمیشہ یاد رکھے گی ۔ میری گجر قوم کے با اثر کاروباری شخصیات سے اپیل ہے کہ اپنے قیمتی ہیروں کے ساتھ بیٹھک کر کے گجر قوم کےمستحق افراد کے لیے بہترین پالیسی مرتب کریں  جس سے گجر قوم کے کمزور لوگ بھی معاشرے میں آگے آ سکیں ۔ یہ قوم کے وہ ہیرے ہیں جو عہدوں پر رہتے ہوئے بغیر کسی لالچ کے اپنی جان و مال کو گجر قوم کے لئے وقف کیے ہوئے ہیں ۔ جیسے عبدالحمید بابا جی نے سوات میں تعلیم کی اہمیت کو اجاگر کیا اور لاہور میں غریب اور بے سہارا 1400 بچیوں کی شادی کروائی ان کا یہ عمل گجر قوم کے لیے باعثِ فخر ہے ۔ سردار محمد الیاس کی خدمات ہمدرد فاؤنڈیشن کے روپ میں اپنی مثال آپ ہے ۔ سب کو آگے بڑھ کر اپنے حصے کی شمع روشن کرنا ہو گی ۔ اپنے ہیروز کے بتائے نقشِ قدم پر چلنا ہو گا ۔ بے شک خدمتِ خلق ایک بہترین عمل ہے جس سے دنیا وآخرت دونوں میں راحت ہے بہترین  کردار اور خدمت خلق  کے جذبے کی حامل شخصیات ہی قوم کو مضبوط اور کامیاب بناتی ہیں ۔۔ اللہ کریم دونوں صاحبان کو ہمت و حوصلہ  دے اور اپنے مشن میں مزید کامیابی و کامرانی عطا فرمائے۔۔۔

اللہ پاک ہم سب کا حامی وناصر ہو آمین۔۔۔

اہل وطن کو جشن آزادی مبارک ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

2 تبصرے “قوم کے سپوت۔۔تحریر۔۔ماہا سیف گجر

  1. آج کسی دوست نے آپکی ایک تحریر کے ساتھ آپکا لنک بھیجا ۔۔بہت ہی بہترین تحریریں دیکھنے اور پڑھنے کو ملیں۔آپکی بہترین کاوش ۔۔۔اللہ تعالی مزید ھمت اور طاقت دے اور آخرت کیلیے اس خدمت کو قبول فرمائے۔۔آمین

اپنا تبصرہ بھیجیں