493

گجر قوم کے لیے خطرہ ۔۔تحریر ۔۔ ماہا سیف گجر

گجر قوم کے لیے خطرہ

تحریر ماہا سیف گجر

کسی بھی گھر خاندان یا پھر قوم کو ختم کرنے کا سب سے آسان طریقہ تقسیم ہے ۔ کسی قوم پر عملِ تقسیم لاگو کر دیا جائے تو اتحاد ختم ہوتے ہی طاقت بھی ختم ہو جاتی ہے ۔ بدقسمتی سے پاکستان میں چند گجر تنظیموں کے علاوہ باقی سب تنظیموں نے  آج تک صرف اور صرف سیاسی مقاصد کے لیے گجر قوم کو استعمال کیا ہے ۔ پاکستان کے دور دراز اور غیر ترقی یافتہ علاقوں میں  کچھ تنظیموں نے ضرورتِ وقت کے مطابق  بہت محنت اور کوششوں کے بعد اپنی قوم میں اتحاد ،  محبت اور تعلیم کا شعور اجاگر کیا ۔ لیکن اب تو آئے روز نئے سے نئے گروپ بننے شروع ہو گئے ہیں ۔ گجر قوم کے تمام باشعور لوگوں سے ایک سوال ہے کہ کیا کسی قوم کو اگے لانے  کے لیے گروپ ضروری ہیں یا پھر کام ؟؟؟  گجر قوم کو تقسیم کرنے والے کبھی بھی محبِ قوم نہیں ہو سکتے ماسوائے اپنی ذاتی تشہیر اور مفاد کے اس وقت گجر قوم کے اتحاد کے لیے سب سے بڑا خطرہ ہر گلی ، محلہ اور علاقے میں بننے والے گروپس ہیں ۔ گجر  پاکستان کے کسی بھی علاقے میں قیام پذیر ہو اسکا ایک ہی گجر گروپ ہونا چاہیے ۔ اس وقت قوم کو اتحاد کی ضرورت ہے گروپس کی سیاست اور کام تو ان قوموں کا ہے جن کی تعداد کم ہو ۔ پاکستان میں گجر قوم تقریباً  پانچ کروڑ سے زائد  نفوس پر مشتعمل ہے ۔ نا صرف پاکستان بلکہ  تمام دنیا میں گجر آباد ہیں ایسے میں قوم کو تقسیم کر کے ہم اپنی نئی نسل کو کیا پیغام پہنچا رہے ہیں ۔ بیرونی طاقتیں گجر قوم کو تقسیم کر کے اپنے اپنے مفادات حاصل کرنے میں لگی ہوئی ہیں ۔ ہمارے نوجوان ہر قسم کے جذبے سے لبريز ہیں لیکن ان کی رہبری کے لیے کوئی منظم پلیٹ فارم موجود نہیں ۔ چھوٹے چھوٹے گروپ نئے نوجوانوں کا مورال ڈاؤن کرنے میں سب سے آگے ہیں ۔ ایک قوم کے سینکڑوں گروپس اور متعدد تنظیمیں نوجوان نسل کو کشمکش میں مبتلا کیے ہوئے ہیں ۔ ان کی آدھی زندگی تو اسی سوچ اور تحقیق میں گزر جاتی ہے کہ کون سی تنظیم اور گروپ صحیح ہے اور کون سا بے سود۔۔۔اب کیا گجر قوم کو تقسیم کے دوراہے پر لانے والے قوم کے محسن کہلانے کے لائق ہیں ؟؟؟ ان نت نئی تقسيم کار گروپوں اور تنظیموں کی وجہ سے گجر قوم کی نئی نسل ان محسنوں اور تنظیموں کے ممبران کو بھی بھلا بیٹھے ہیں جنہوں نے 2000 سے پہلے کے مشکل دور میں قوم کی خدمت میں اپنے آپ کو صفِ اول میں رکھا ۔ جب سوشل میڈیا اور الیکٹرانک تشہیر ایک خواب تھا ۔ ابھی بھی اگر گوتوں کے گروپ سے باہر نکل کر قوم بن کر اتفاق سے چلا جائے تو گجر قوم کے سنہری دور کو کوئی ختم نہیں کر سکتا ۔ اللہ پاک ہم سب کا حامی و ناصر ہو ۔۔۔آمین ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

گجر قوم کے لیے خطرہ ۔۔تحریر ۔۔ ماہا سیف گجر” ایک تبصرہ

  1. Hum ap ki bat say itefaaq karty hy bilkul gujjar k naam pe logo ko dokaa deta hy gujjar ho kar gujjar Qoom k liye kaam karna chaheye igree with you Asad ali gujjar from mardan kpk

اپنا تبصرہ بھیجیں