424

پرانا چورن ۔ تحریر ۔ ماہا سیف گجر

پرانا چورن

تحریر :~ ماہا سیف گجر

 پاکستان کا اہم ترین صوبہ جہاں بسنے والی گجر قوم کے اتحاد ، اتفاق اور بھائی چارے کی مثال پورے پاکستان میں دی جاتی ہے گزشتہ چند روز سے مسلسل گردش کرتی عجیب و غریب خبروں کے باعث وہاں مقیم گجر قوم میں مایوسی پھیلتی جا رہی ہے ۔ یہاں بات ہو رہی ہے پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کی ۔تاریخ گواہ ہے مالاکنڈ ڈویثرن میں مقیم گجر قوم نے بے پناہ قربانیاں دے کر ایک مقام حاصل کیا ہے ۔ لیکن بدقسمتی سے وہاں اب سیاست اس قدر قوم میں اپنے پنجے گاڑ چکی ہے کہ چند قائدین کو یہ وہم ہونے لگا ہے کہ ہم نے گجر قوم کی خدمت کی ہے تو قوم کو جس مقصد کے لیے چاہیں استعمال کر سکتے ہیں ۔ کسی بھی قوم کو تباہ کرنا ہو تو اسے تقسیم کر دیا جاتا ہے وہ نہ ہو تو اسے اپنے ذاتی مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا ہے ۔ گجر قوم سے محبت اور خدمت ہر گجر کا فرض ہے اس خدمت اور محبت کے عوض گجر قوم کو کوئی بھی اپنے ذاتی مقاصد کے حصول کے لیے  نقصان پہنچائے  یہ ہرگز مناسب نہیں ۔

تاریخ گواہ ہے کہ جس قوم کے اہلِ دانش کردار کے بجائے قول کے غازی بن جائیں تو محرومیاں اور جگ ہنسائی اس قوم کا مقدر بن جاتی ہے ۔۔

گجر قوم ایک قوم ہے تنظیمیں بنا کر اسے پہلے ہی ناقابلِ تلافی نقصان پہنچایا جا رہا ہے ۔ کوئی بھی علاقے کا ملک ، چوہدری ، سردار ، خان ، قوم کی وجہ سے بنتا ہے ۔ یہ سب خطاب اور عزت قوم کی وجہ سے ہی ہے ۔ خیبر پختونخواہ ہو یا سندھ ، گلگت ، پنجاب ، کشمیر سب میں بسنے والے گجر ایک قوم ہیں ۔ نوجوان نسل کو آئین اور تنظیموں کے بھنور میں پھنسا کر گمراہ کیا جا رہا ہے ۔ کیا کبھی کسی قوم کا بھی آئین ہوا ہے ؟ کیا جو گجر کسی تنظیم میں کارکن یا عہدہ دار نہیں اُسے گجر نہیں مانا جائے گا ۔ پانچ کروڑ سے زائد نفوس کی آبادی رکھنے والی گجر قوم کو قوم سے باہر نکال کر تنظیم کے اندر بند کرنا ، خاندانی اور قومی روایات کو نظر انداز کر کے خود ساختہ آئین کے طابع کرنا کہاں کی عقل مندی ہے ۔ 2020 جہاں سب لوگ جدید سہولیات سے استفادہ حاصل کر کے اپنی قوم  کی تاریخ کا مطالعہ با آسانی کر سکتے ہیں ۔ اس وقت صرف نوجوان نسل کو اتفاق کے ساتھ ایک قوم بن کر جینے کے درس کی ضرورت ہے ۔ آبادی کے لحاظ سے بھی اس وقت نوجوان نسل تناسب میں زیادہ ہے تو بزرگوں کو چاہیے سیاست  ، چودھراہٹ سے باہر نکل کر قوم  کو متحد ہونے دیں ورنہ یہ نئی نسل کل آپ کو معاف نہیں کرے گی ۔ ہر گھرانہ کسی نہ کسی سیاسی پارٹی سے وابستہ ہوتا ہے  ۔ یہ سیاسی تعلق ان کا ذاتی عمل ہے ۔ کیا کبھی قومیں بھی سیاسی ہوتیں ہیں ؟؟؟ کیا قوم بڑی ہوتی ہے یا سیاست ؟؟ لکھنے کا مقصد صرف یہ ہے کہ گجر قوم کو گمراہ کرنے کا فائدہ صرف فردِ واحد کو ہی پہنچے گا لیکن نقصان پوری قوم کو ہو گا ۔ میرا نوجوان نسل کو یہی پیغام ہے گجر ایک باوقار ، بہادر اور وفادار قوم ہے اس کی تقسیم کو ناکام بنا کر کسی بھی چھوٹے دائرے کار میں نہ آنے  دیں ۔ سب کا فرض ہے کہ متحد ہو کر ایک قوم کی صورت اپنے بزرگوں اور گجر قوم کی خاندانی روایات کو اپنا کر اپنی قوم کی ترجمانی کریں ۔ سوات بہادروں اور وفاداروں کی زمین ہے کوئی وہاں مقیم گجر قوم کو مایوس اور تقسیم نہیں کر سکتا ۔

اللہ پاک ہم سب کا حامی و ناصر ہو ۔۔۔۔آمین۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں