1,321

الیاسی مسجد ایبٹ آباد

1932 میں قائم ھونے والی تاریخی الیاسی مسجد اور قدرتی ٹھنڈے میٹھے پانی کے چشمے سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنے ھو ئے ہیں اندرون ملک و بیرون ملک سیہرسال ہزاروں لاکھوں کی تعداد میں سیاح یہاں آتیہیں ضرورت اس امر کی ہیکہ حکومت اس تفریحی مقام کو سیاحوں کے لیے مذید پرکشش بنائے تاکہ مقامی لوگوں کیلے روزگار نئے نئے مواقعوں کے ساتھ ساتھ سیاحوں کو بھی تفریحی کے نئے مواقع میسرآسکیں ایبٹ آباد کے نواحی قصبے اور ملک کیمعروف سیاحتی مقام الیاسی مسجد، نواں شہر کا قدیم و مشہور میٹھے پانی کا چشمہ گیارہ ماہ خشک رہنے کے بعد ایک بارپھر اچانک رواں ہو گیا جس سے مقامی لوگوں اورسیاحوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ اس بار چشمے میں پانی کی مقدار بھی معمول سے بہت ذیادہ ہے۔ اس قدرتی چشمے کے اچانک جاری ہونے سے الیاسی نواں شہر اور دیگر مکینوں کے علاوہ سیاحوں میں بھی خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے الیاسی مسجد نواں شہر کا یہ تاریخی چشمہ مقامی اور دور دراز سے آنے والے سیاحوں کے لئے گہری کشش رکھتا ہے اور ایک سال چشمہ خشک رہنے کے باعث الیاسی آنے والے سیاحوں کو مایوس لوٹنا پڑتا تھا۔ ایبٹ آباد کے باسی الیاسی مسجد کے قدرتی چشمے کے پانی کو صحت افزا اور شفا یاب بھی قرار دیتے ہیں اور ایبٹ آباد کے علاوہ دیگر شہروں کے لوگ بھی یہاں سے پینے کے لئے پانی لے کر جاتے ہیں۔ چشمے کی بحالی کے ساتھ ہی الیاسی مسجد میں سیاحوں کی رونقیں بحال ہو گئی ہیں۔ جہاں لوگ الیاسی کے مشہور پکوڑوں کے علاوہ اب چشمے کے ٹھنڈے میٹھے پانی سے بھی لطف اندوز ہو رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں