ہمارے بارے میں

ہزارہ اپ ڈیٹ کا آغاز جنوری 2017ء میں کیا گیا۔تقریبا ڈیڈھ برس ہی گزرے کہ لاکھوں افراد خوشی کا اظہارکرتے ہوئے اسکا حصہ بنے ہیں۔۔اس کا مختصر سفر کسی بھی طور یکساں اور آسان نہیں تھا۔۔ہزارہ اپ ڈیٹ کو بھی کئی نشیب و فراز سے گزرنا پڑا۔۔مشکلات کا سامنا کرنا پڑا مصائب کی بھٹی سے گزرنا پڑا لیکن اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے اس نے ہر آزمائش کا مردانہ وار مقابلہ کیا۔۔قلم اور قرطاس کی حرمت کیساتھ لفظ کی تکریم کو مقدم رکھا۔۔کیونکہ لفظوں کی حرمت ہوتی ہے اور انکی عزت اور وقار پہ کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جا سکتا۔۔اللہ کی زمین پر اللہ کی حکومت اور اللہ کے بندوں کے ذریعے رفاہی فلاحی مملکت کا قیام، نوجوانوں کی ذہن سازی، تعلیمی ترقی، شعور کی بالیدگی، آگاہی اور آگہی،سچی صاف اور صحیح راستے کا چناو ہمارا نصب العین ہے۔۔ہزارہ اپ ڈیٹ پہ علمی و ادبی گفتگو کیساتھ فنون لطیفہ کو پروان چڑھانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔۔ہمارا اس بات پر پختہ یقین ہے کہ پاکستان کے وسائل اس کے تمام شہریوں کیلئے عام ہونے چاہئیں۔۔ پاکستان کے سب بچوں کو یکساں تعلیم ملنی چاہیئے۔۔ پاکستان کے ہر شہری کو ارزاں علاج کی سہولت حاصل ہونی چاہیئے۔۔مخصوص طبقات کے بجائے عام افراد فیصلوں میں کلیدی کردار ادا کریں۔۔ہمارا المیہہ ہیکہ ہمارے وسائل مخصوص ٹولوں نے اپنی گرفت میں لے رکھے ہیں۔۔امیروں کے سکول، ہسپتال، بستیاں حتیٰ کے قبرستان بھی الگ ہیں۔۔ صحت اور تعلیم کو تجارت بنا دیا گیا ہے۔۔غریب کے ہونہار بچے امراء کی نالائق اولادوں کے سامنے بے بس اور لاچار دکھائی دیتے ہیں۔۔ہزارہ اپ ڈیٹ نظریے پاکستان پہ پختہ یقین رکھتا ہے ہمارے نزدیک اسلام پاکستان کی روح ہے۔۔ اس کے بغیر اس کا وجود بے معنی ہے۔۔مگر اسلام کے نام پہ پھیلائی گئی جاہلانہ اور جاگیردارانہ تعبیر پر بھی ہم یقین نہیں رکھتے۔۔اسلام کا اولین تقاضا یہ ہے کہ ہر شہری سے یکساں سلوک، یکساں حقوق، یکساں تعلیم و ترقی کے مواقع دیئے جائیں کسی صورت میں بھی عوام کی عزت نفس کو مجروح نہ کیا جائے ہمارا یہ شعور و آگاہی کا سفر جاری ہے اور انشاءاللہ جاری رہے گا۔۔ہمارے لئے اللہ ہی کافی ہے اور وہ سب سے بہتر مددگار ہے۔۔ہم تعلیم، صحت، معاشرتی اقدار، ثقافت، سیاست، معیشت اور معاشرت پہ آگاہی کا فریضہ سرانجام دینے میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں ہونے دیں گے۔۔ان شاء اللہ۔۔تاکہ ہمارا ملک دنیا کے نقشے پہ عظیم ملک اور عوام عظیم اقوام میں کھڑی نظر ائے۔۔آمین۔۔